Wama Adraka / وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ

Across Holy Quran, there are several occasions where Allah has asked the question regarding a particular ‘event’ and then in the proceeding verses explained the meaning of such term. Among some verses, Allah has used an Arabic idiom ‘Wama-Adraaka’ (Meaning: And what can make you know what that is?) to stress on the importance of a particular unknown event. This type of questioning occurs 12 times in Holy Quran. These verses are

قرآن پاک میں متعدد مواقع ایسے ہیں جہاں اللہ تعالیٰ نے کسی خاص ’’واقعہ‘‘ سے متعلق سوال کیا ہے اور پھر آگے کی آیات میں اس اصطلاح کے معنی بیان کیے ہیں۔ بعض آیات میں، اللہ تعالیٰ نے کسی خاص نامعلوم واقعہ کی اہمیت پر زور دینے کے لیے عربی محاورہ ‘وما ادراک’ (معنی: اور آپ کو کیا معلوم ہو سکتا ہے کہ وہ کیا ہے؟’) استعمال کیا ہے۔ قرآن پاک میں اس قسم کے سوالات 12 مرتبہ آئے ہیں۔ یہ آیات ہیں۔

وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا یَوۡمُ الدِّیۡنِ
سورة الإنفطار آیت #17

ثُمَّ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا یَوۡمُ الدِّیۡنِ
سورة الإنفطار آیت #18

وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا سِجِّیۡنٌ
سورة المطففين آیت #8

وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا عِلِّیُّوۡنَ
سورة المطففين آیت #8

وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا الطَّارِقُ ۙ
سورة الطارق آیت #2

وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا الۡعَقَبَۃُ
سورة البلد آیت #12

وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا لَیۡلَۃُ الۡقَدۡرِ
سورة القدر آیت #2

وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا الۡقَارِعَۃُ
سورة القارعة آیت #3

وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا ہِیَہۡ
سورة القارعة آیت #10

وَ مَاۤ اَدۡرٰىکَ مَا الۡحُطَمَۃُ
سورة الهمزة آیت #5

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *